میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

جمعرات، 29 مئی، 2014

بدنصیب شخص


تیسرا وہ شخص 
جس کے پاس صحت ہو اور پیسہ ہو اور اس کے باوجود     وہ 

" ایک بیوی پر گذارا کر رہا ہو "

'

4 تبصرے:

  1. Yeh Buzurgon par tana hae.... Sham of U

    جواب دیںحذف کریں
  2. feel little bit shame i thought this blog is some thing worth reading but

    جواب دیںحذف کریں
  3. آہ میرے ہمدرود دوستو !
    گمنام-1 ، گمنام-2 اور عدنان سمیع ۔
    یقین مانو، میں آپ سے متفق ہوں واقعی ، بزرگوں کا مذاق نہیں اُڑانا چاھئیے ، لیکن بزرگی کی عمر کہاں سے شروع ہوتی ہے ۔ کیا آپ بتانا پسند فرمائیں گے ؟
    اور ھاں اِس پوسٹ کو اب تک ، بشمول آپ تینوں کے 22،806 دوستوں نے پڑھا ، کوئی بھی آپ سے متفق نہیں ۔ شائد اُن کا بزرگی کا میعار آپ سے مخلتف ہے ۔

    جواب دیںحذف کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔