میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

فیس بک کے دیوانے

جمعرات، 26 جون، 2014

وحی غیر متلو-18-محمد ﷺ سے بیعت

باب 11۔  محمد ﷺ سے بیعت ۔
وحی غیر متلو (حدیث )  18
--
اِس میں :-
1- اللہ کے ساتھ کسی کو شریک نہ کرو
2- چوری نہ کرو

4- اولاد کو قتل نہ کرو ۔
5- تم اپنے ہاتھوں اور اپنے پیروں کے درمیان، اپنے پر   کوئی  بہتان نہیں لاؤ   ۔
6-اور تم معروف میں کوئی عصی (غلطی) نہیں کرو۔
7-پس جو کوئی اِ س میں تم میں سے  ہو ، تو اُس کا اجر اللہ پر ہے۔
8- اور جوکوئی   اِس میں مبتلاء ہو تو وہ دنیا میں  تعاقب کیا جائے گا (سزا کے لئے )  تو وہ  سزا اُس کے لئے کفارۃ ہے ۔
9- اور جوکوئی   اِس میں مبتلاء ہو  پھر اللہ نے اُس کا ستر رکھا ، تو وہ اللہ پر ہے  ۔(یعنی وہ گناہ چھپ جاتا ہے ) چاہے تو اللہ معاف کرے  چاہے تو تعاقب کرے  (بذریعہ مکافاتِ عمل)



٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
نوٹ: جو قارئین  وحی غیر متلو  1 سے 17 تک پڑھ چکے ہیں ، اُنہوں نے بھی یہ بیعت محمد ﷺ سے کی ہے ۔ اگر ہاں تو پھر ہم آگے چلیں گے ۔ 
کیوں کہ اِس سفر میں ایسے مقام آئیں گے کی جو اِس بیعت سے بھی زیادہ سخت ہوں گے ،   وحی غیر متلو  14 اور 15 کا تقاضا یہی ہے ۔  کہ بیعت کر لی جائے ۔    ورنہ حبِ رسولﷺ ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنا یا دَشنام طرازی نہیں ،
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
اللہ نے  محمدﷺ کو انسانی گناہوں سے معافی کے لئے اپنی سنت بتائی : جو سب   " الکتاب" (وحی متلو ) میں درج ہیں  :

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔