میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

فیس بک کے دیوانے

پیر، 11 جنوری، 2016

چھلکے کھائیے

   کیلے کے چھلکے کو کوڑے دان کی نذر مت کیجئے !
 
٭    ۔                                                  کیلے کا چھلکا غذائیت سے پر ہے۔ اس میں معدنی پوٹاشیم بکثرت ہوتا ہے ۔ یہ معدن ہمارے بلند فشار خون (بلڈ پریشر ) کم کرتا اور موڈ بہتر بناتا ہے۔ اس میں حل پذیر ریشہ بھی خوب ملتا ہے   یہ ریشہ ہم میں سیری کا احساس پیدا کرتا-
٭    ۔                                                   کولیسٹرول ( ایل ڈی ایل ) سے نجات دلاتا ہے 
  ٭    ۔                                                  یہ چھلکا غیر حل پذیر ریشہ بھی رکھتا ہے، ہماری آنتوں کی صفائی کرکے ہمارا نظام ہضم ٹھیک کرتا ہے،  کیلے کے چھلکے کی خصوصیات کے باعث بھارت سمیت کئی ایشائی ممالک میں یہ بطور سبزی پکایا جاتا ہے 
٭    ۔       اس کی یخنی (سوپ) بھی بنتی ہے
 لہذا آئندہ بے پروائی سے کیلے کا چھلکا مت پھینکیئے 
بلکہ اسے کام میں لائیے

٭    ۔                                      چھلکے کے نیچے واقع سفید حصہ بھی غذائیت رکھتا ہے  ماہرین طب کے مطابق یہ سفید حصہ وٹامن سی اوروٹامن بی 6 کا حامل ہے۔!
٭    ۔                                       سفید حصے میں سائٹرولین ( Citrulline) نامی کیمیائی مادہ  بھی ملتا ہے  یہ ایک امائنو ایسڈ یا تیزاب ہے،  جو ہمارے بدن میں خون کی نالیوں کو صاف کرتا ہے- یوں ان میں خون روانی سے دوڑتا اور ہمیں تندرست رکھتا ہے

The organic compound citrulline is an α-amino acid. Its name is derived from citrullus, the Latin word for watermelon, from which it was first isolated in 1914 by Koga & Odake. It was finally identified by Wada in 1930. It has the formula H2NC(O)NH(CH2)3CH(NH2)CO2H. It is a key intermediate in the urea cycle, the pathway by which mammals excrete ammonia.
In the body, citrulline is produced as a byproduct of the enzymatic production of nitric oxide from the amino acid arginine, catalyzed by nitric oxide synthase. This is an essential reaction in the body because nitric oxide is an important vasodilator required for regulating blood pressure.
 
Formula: C6H13N3O3
Molar mass: 175.2 g/mol


 

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔