میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

فیس بک کے دیوانے

پیر، 22 اگست، 2016

8264 دھشت گرد !

سائبر کرائم کے پہلے مجرم ۔ 

دھشت گردی اس قوم کا سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ اپنے سب سے بڑے مسئلے پر یہ قوم کتنی سنجیدہ ہے؟ 

محض 20 دنوں کے اندر 8264 غلط کالیں وہ بھی اس نمبر پر جو صرف اور صرف دھشت گردی کی اطلاع کےلیے مخصوص ہے۔ 
کیا اس سے بڑی بدبختی کی کوئی علامت ہے کہ زندگی بچانے کےلیےقائم کیے گئے ذرائع کو ایک قوم اپنے غیر سنجیدہ رویے کی وجہ سے کام سے روک رہی ہے۔ 20
 دنوں میں فی گھنٹہ کے حساب سے 17 غلط کالیں۔ اس سے بڑھ کر اور کوئی ظلم ہو ہی نہیں سکتا جو قوم اپنے حق میں کرے۔ اس غیر سنجیدہ رویے پر جتنی لعنت و ملامت کی جائے کم ہے۔

 جب ٹیلی کمیونیکیشن اتنی فعال نہیں ہوتی تھی کہ کسی بھی کال کرنے والے کے بارے معلوم کیا جاسکے ۔ تب اِس قسم کے مذاق کم تھے ، لوگ ذمہ دار تھے ۔
 موبائل کے استعمال نے ، نہ صرف اِن مذاق کی حد میں خطرناک اضافہ کیا ہے، بلکہ مجرموں تک پہنچنے میں 100 فیصد کامیابی حاصل کی ہے ۔
حکومت اِس بارے میں سنجیدہ ہے کہ غلط معلومات مہیا کرنے والوں پر " سائیبر کرائم " کے تحت مقدمات بنائے جائیں ۔

 
20 Points of National Action Plan۔

1. Implementation of death sentence of those convicted in cases of terrorism.

2. Special trial courts under the supervision of Army. The duration of these courts would be two years.

3. Militant outfits and armed gangs will not be allowed to operate in the country.

4. NACTA, the anti-terrorism institution will be strengthened.

5. Strict action against the literature, newspapers and magazines promoting hatred, extremism, sectarianism and intolerance.

6. Choking financing for terrorist and terrorist organizations.

7. Ensuring against re-emergence of proscribed organizations.

8. Establishing and deploying a dedicated counter-terrorism force.

9. Taking effective steps against religious persecution.

10. Registration and regulation of religious seminaries.

11. Ban on glorification of terrorists and terrorist organizations through print and electronic media.

12. Administrative and development reforms in FATA with immediate focus on repatriation of IDPs.

13. Communication network of terrorists will be dismantled completely.

14. Measures against abuse of internet and social media for terrorism.

15. Zero tolerance for militancy in Punjab.

16. Ongoing operation in Karachi will be taken to its logical end.

17. Balochistan government to be fully empowered for political reconciliation with complete ownership by all stakeholders.

18. Dealing firmly with sectarian terrorists.

19. Formulation of a comprehensive policy to deal with the issue of Afghan refugees, beginning with registration of all refugees.

20. Revamping and reforming the criminal justice system.




















خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔