میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

فیس بک کے دیوانے

ہفتہ، 12 نومبر، 2016

Allama Iqbal Open University

 ایک ایسی یونیورسٹی جس نے پاکستان میں رہنے والے تمام افراد کو تعلیم سے روشناس کروایا ، گو کہ تمام یونیورسٹیاں یہ کام کر رہی ہیں لیکن اِس یونیورسٹی کی خوبی یہ ہے ، کہ آپ کو کلاس میں نہیں جانا پڑتا ۔ اور پڑھے بغیر آپ امتحانی پرچے پر ایک لفظ بھی نہیں لکھ سکتے ۔ میری رائے میں پاکستان کی یہ سب سے مشکل امتحان لینی والی یونیورسٹی ہے اور یہ میٹرک سے لے کر پی ایچ ڈی تک کے پروگرام چلاتی ہے ۔ 

 Spring 2016




٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
میں نے 1998 میں ایم اے سوشیالوجی کا امتحان دیا تھا ، یقین مانیں اسائینٹمنٹ لکھنے ، جمع کروانے اور پرچہ دینے میں دانتوں تلے پسینہ آگیا تھا ۔ کیوں کہ پاس ہونے کے لئے 100 میں سے 40 نمبر لینا لازمی ہے ۔
ھاں جی !!!!!  33 نہیں ۔ 


کیا سمجھے ؟
اب میری چھوٹی بیٹی فزکس میں قائد اعظم یونیورسٹی سے ایم فل کرنے ، مگر فوجی مجبوری کے وجہ سے وائیوا جمع نہ کرا سکنے کے بعد ، اب ایم اے ایجو کیشن کر رہی ہے ۔ 
میں نے جب اُسے یہ پرچہ وٹس ایپ کیا تو وہ ہنسی اور میسج کیا  ۔
" پپا ، اپیا مجھ سے لڑے گی "
میں نے جواب دیا ،
" اگر میں مضمون لکھا تو آپا(بڑی بہن)  میری مٹی پلید کر دے گی " 
گو کہ یہ پرچہ انگلش کا ہے!
لہذا اپنی آپا سے پہلے سے گستاخی معاف کرواتے ہوئے یہ مضمون اردو میں لکھنے کی جسارت کررہا ہوں ۔ 

 سوال : اپنی بڑی بہن کی پرسنیلٹی کے بارے میں لکھیں 

 اب یہ مضمون پڑھیں ،
 میری بڑی بہن

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔