میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

فیس بک کے دیوانے

اتوار، 29 اپریل، 2018

پروڈکٹ میعار پر پوری نہیں اتری !

 آج ایک اور  بیٹی میکے آگئی !
کیونکہ وہ جس گھر میں  وہ چاہتوں سے بیاہ کر گئی ، وہاں  اُن کو اس کی عادتیں پسند نہیں  آئیں ۔
 اُ س  کو کھانا بنانا نہیں آتا ،  اس کا دل ہر وقت میکے میں لگا رہتا ،  مہارانی ، روزانہ    صبح دیر سے اٹھتی تھی ۔
یہ شکایات ایک بیس سال کی لڑکی پر ایک پچپن سال کی ساس لگا رہی ہے!
کہ کیسی پھوہڑ کوبہو بنا  کر لائی !
یہ الزام ایک ساٹھ سال کا سسر لگا رہا ہے ، یہ الزام ایک تیس سال کا شوہر لگا رہا ہے ۔
بیس سال کی لڑکی کو اپنی عمر اپنے تجربے کے مینار پر کھڑے ہوکر پرکھتے ہیں ۔
ہمارے گھر ایسا نہیں ہوتا ، ویسا نہیں ہوتا ۔

بیس سال کی لڑکی جو اپنے باپ کے لاڈ میں پلی ہو ، جو اپنے بھائیوں کے ہاتھ کا چھالا ہو ، ماں کا آنچل چھوڑے کچھ سال ہی ہوئے ہوں ، یہاں تک کہ پڑوس والے چاچا تک ٹوٹ کر چاہتے ہوں۔
وہ ایک گھر سے دوسرے گھر میں آئی ہے جو اُس کے لئے مکمل اجنبی ہے ۔  نہ ماں کی گود ہے اور نہ باپ کا شفقت بھرا ہاتھ ، نہ بہنوں کی ہمدردی ، سب یہ سمجھ رہے ہیں کہ اُن کے بھائی کے ساتھ ڈولہ میں بیٹھ کر آنے والی اپنا   دولہن کا جوڑا اتارے گی اور کمر پر دوپٹہ لگ کر اُن کے صاف ستھرے گھر کی دوبارہ صفائی شروع کر دے گی ۔
ابھی تو اُس کا مکمل تعارف ہی نہیں ہوا ،  سب اُسے بیٹے  کی بیوی سمجھ رہے ہیں ، بہو کی جگہ تو اُسے ملی ہی نہیں ۔نندوں نے  بھابی کا مان ہی نہیں دیا ۔
بس یہی سمجھا کہ  ایک ایک مکمل تربیت یافتہ  روبوٹ اُن کے گھر کا حصہ بن گئی ہے ۔
جو  ایک کمپنی پروڈکٹ ہے ،

 مکمل وارنٹی و گارنٹی کے ساتھ !
ایک مکمل پیکیج !

 جس میں تمام صفت موجود ہو اور ایسے موجود ہو جس کو بٹن دباؤ اور سو فیصد درست فنکشن ہو!
 30دن میں  میعار پر پورا نہیں اتری ، مینوفیکچرر کو  سیکیورٹی ضبط کرنے کے بعد ،ا ستعمال شدہ  پروڈکٹ واپس کردی۔

 ٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔