میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

ہفتہ، 27 جولائی، 2019

پاسپورٹ۔سرکاری ملازمین سکیم

تمام سرکاری ملازمین  کا پاسپورٹ      Govt Employee Passport کے تحت بنے گا ۔ جو سے لئے قواعد و ضابطہ اور خلاف ورزی کی صورت میں جرمانہ و سزا متعین کردی گئی ہے ۔ کیوں کہ بہت سے سرکاری ملازمین ، سالانہ چھٹی لے کر بیرونِ ملک  اپنے پرائیوٹ پاسپورٹ پر  چلے جاتے ہیں ۔ جس کا حکومت کے پاس کوئی ریکارڈ نہیں ہوتا اور نہ ہی امیگریشن والے  اُن کا علیحدہ ریکارڈ سرکاری ملازمین ہونے کا رکھتے ہیں ۔ 
بیرونِ ملک جانے والے تمام سرکاری ملازمین کو اپنے محکمے کا این او سی  لازمی لیناپڑتا ہے بصورت دیگر  امیگریشن حکّام انہیں سفر نہیں کرنے دیتے ۔ 
لہذا حج یا عمرے  پر جانے والے تمام سرکاری ملازمین کسی بھی الجھن سے بچنے کے لئے ، مندرجہ ذیل پر عمل کریں ۔ 
 ٭٭٭٭٭٭٭٭٭
 وہ ملازمین جنہوں نے سرکاری سروس جوائن کرنے سے پہلے پاسپورٹ  بنوایا    اور وہ ملازمین  جنہوں نے سرکاری ملازمت ملنے کے بعد خود کو سرکاری ملازم ظاہر نہ کرکے پاسپورٹ بنوایا ۔ اُن کے لئے قوانین درج ذیل ہیں :
٭- سرکاری ملازمت سے پہلے  بنوائے ہوئے پرائیوٹ سٹیزن  پاسپورٹ کو ،
سرکاری ملازم پاسپورٹ۔  Govt Employee Passport میں تبدیل کروانا:

٭- پہلی کیٹگری:وہ سرکاری ملازمین جن کا پاسپورٹ گورنمنٹ سروس جوائننگ سے پہلے بنا ہوا تھا اور گورنمنٹ سروس جوائننگ سےپہلےہی ایکسپائرہوگیاتھا ۔اب جب وہ اِسے Renew  کروائیں گے تو       وہ ،   Govt. Employee  والا پاسپورٹ بنوائیں گے  ۔جس کی  نارمل فیس  3,000    روپے ہے ۔
   ٭- دوسری کیٹگری:
  ٭- دوسری کیٹگری۔ A : وہ سرکاری ملازمین جن کا پاسپورٹ گورنمنٹ سروس جوائننگ سےپہلےبناہواتھا اور پاسپورٹ کی Expireyمدت باقی ہے۔ تو وہ اپنا پاسپورٹ  
اب  وہ  اپنا  نیا ،   Govt. Employee  والا پاسپورٹ ۔ نارمل فیس  3,000   کے ساتھ لازمی Renew کروائیں گے۔
27 ستمبر 2019   کے بعد 50 ہزار جرمانہ ہوگا اور محکمانہ کارروائی کے ساتھ ساتھ FIA میں ایف-آئی-آر بھی درج ہوگئی۔
 ٭- دوسری  کیٹگری ۔B :  وہ سرکاری ملازمین جن کا پاسپورٹ گورنمنٹ سروس جوائننگ سےپہلےبناہواتھا اور گورنمنٹ سروس جوائننگ کےبعد_Expireہوا ۔
اب جب وہ اِسے Renew  کروائیں گے تو       وہ ،   Govt. Employee  والا پاسپورٹ بنوائیں گے  ۔جس کی  نارمل فیس  3,000    روپے ہے ۔

 Documents Require:
 ⬅ چالان فارم NBP (سفید رنگ کا) ۔ پاسپورٹ فیس ۔ 3,000 ر وپے -
شناختی کارڈ کاپی - 2 عدد 
پرانے پاسپورٹ کے پہلے 2 پیجز کی کاپی - 2 عدد 
میمورنڈم فارم (Memorandum Form) :
🔸 ۔اگر ہائی سکول ہے ۔  تو ہائی سکول کے ہیڈ کے دستخط بمع مُہر ۔
🔸۔ اگر مڈل سکول ہے۔ تو سکول ہیڈ اور ڈی-ای-او صاحب کےدستخط بمع مُہر۔
 🔸۔ اگر پرائمری سکول ہے۔ تو اے-ای-او اور ڈی-ای-او صاحب کے دستخط بمع مُہر
اپائنٹمنٹ لیٹر کاپی - 1 عدد 
جوائننگ لیٹر کاپی - 1 عدد
 نوٹ = جب آپ پاسپورٹ آفس Enter ہوں گے تو آپ کو NOC کا کہیں گے تو انھیں بتائیں  کہ ہمارا پاسپورٹ سروس جوائننگ سے پہلے کا بنا ہوا ہے۔ لہذا ہمارا صرف Memorandum Form  ہی لگنا ہے۔ اور اپائنٹمنٹ لیٹر کی کاپی ساتھ لف ہے ۔
 (کیونکہ اس کا ایشو بنا یا جا رہا ہے )
 ٭٭٭٭٭٭
 ٭- سرکاری ملازمت ملنے کے بعد بنوائے ہوئے پاسپورٹ:
٭- تیسری  کیٹگری : وہ سرکاری ملازمین جنہوں نے پاسپورٹ گورنمنٹ سروس جوائننگ کےبعدپرائیویٹ بنوایاہواہے۔
  وہ اپنا Govt. Employee والا پاسپورٹ نارمل فیس 3,000/-اور 5,000/- جرمانہ کے ساتھ لازمی Renew کروائیں گے۔
: Documents Require 
چالان فارم NBP (سفید رنگ کا) ، پاسپورٹ فیس ۔ 3,000 ر وپے -
 ⬅ چالان فارم NBP (گلابی رنگ کا) 5,000/-
  شناختی کارڈ کاپی - 2 عدد 
پرانے پاسپورٹ کے پہلے 2 پیجز کی کاپی - 2 عدد 
میمورنڈم فارم (Memorandum Form) ان کا دوسرا لگے گا۔
 جس میں آخری پوائنٹ میں مینشن ہے کہ میں نے لاعلمی کی وجہ سے پرائیوٹ پاسپورٹ بنوا لیا تھا۔اب مجھے سرکاری ملازم کا پاسپورٹ بنوانے کی اجازت دی جائے۔ 
ایپلیکشن Govt. Employee پاسپورٹ NOC کے لئے ۔
🔸 ۔اگر ہائی سکول ہے ۔  تو ہائی سکول کے ہیڈ کے دستخط بمع مُہر ۔
🔸۔ اگر مڈل سکول ہے۔ تو سکول ہیڈ اور ڈی-ای-او صاحب کےدستخط بمع مُہر۔
 🔸۔ اگر پرائمری سکول ہے۔ تو اے-ای-او اور ڈی-ای-او صاحب کے دستخط بمع مُہر
  ٭٭٭٭٭٭٭٭٭
پاسپورٹ  بنوانے کے لئے ، اب آپ کو ڈیجیٹل شناختی کارڈ لازمی بنوانا پڑے گا ، اُس کے لئے نزیکی نادرہ آفس جائیں ۔اپنا  اور  فیملی کا ڈیجیٹل شناختی کارڈ بنوائیں ۔ جس کے لئے نادرہ آفس میں ۔ آپ کے والد ، بہن یابھائی  کے ڈیجیٹل  شناختی کارڈ کا نمبر بتانا پڑے گا ۔  یہاں  آپ اپنے   ، اپنی بیوی اور اپنے بچوں  کے  انگلش میں نام  کی سپیلنگ اور  تاریخ پیدائش، ضرور چیک کریں ۔  کیوں کہ آپ کا یہی ڈیٹا ، پاسپورٹ  کے لئے استعمال ہوگا ۔ جو غلطی یہاں ہوگی وہ  پاسپورٹ   میں خود بخود شامل ہوجائے گی ۔   ڈیجیٹل شناختی کارڈ ملنے کے بعد اپنے بنک میں ، ڈیجیٹل شناختی کارڈ  کی کاپی بھی دیں ۔
٭٭٭ ٭٭٭
پاسپورٹ بنوانے کے لئے   طریق کار:

1:  نیشنل بنک  میں  پاسپورٹ فیس کا سفید رنگ کا چالان ۔     3000     روپے نارمل فیس (تیسری  کیٹگری ، گلابی رنگ کا چالان   ،  5,000روپے جرمانہ )  جمع کروانے کے بعد   آپ اپنے شناختی کارڈ ، پرانے پاسپورٹ   ،  سرکاری ڈاکومینٹس اپائنٹمنٹ لیٹر، جوائننگ لیٹر، سروس لیٹر, Pay Slip  کی دو کاپیوں کے ساتھ۔ پاسپورٹ آفس میں داخل ہوں ۔
 اپنے تمام اوریجنل ۔ سرکاری ڈاکومینٹس اپائنٹمنٹ لیٹر، جوائننگ لیٹر، سروس لیٹر, Pay Slip وغیرہ لازمی ساتھ رکھیں کسی وقت بھی وہ طلب کر سکتے ہیں۔
2 :  پاسپورٹ ، آفس میں ، آپ کی تصویریں کھینچی جائیں گی  اور  آپ کی انگلیوں کے بائیومیٹرک نشان لئے جائیں گے ۔ 
3-  اگلے کاؤنٹر پر پاسپورٹ  کے لئے ، شناختی کارڈ نمبر سے آپ کی تمام معلومات  لینے کے بعد ، آپ سے نئی معلومات پوچھی جائیں گی ۔آپ لازمی بتائیں کہ میں سرکاری ملازم ہوں  اور  سرکاری پاسپورٹ بنوانا ہے۔ وہ آپ کا پرانا ڈاٹا  دیکھے گا اور آپ سے دیگر معلومات پوچھے گا 4-   آپ کو ایک Print Out  دے گا ۔ جس پر تمام ضروری معلومات درج ہوں گی :
 🔸 ۔اس میں لازمی دیکھیں کہ پروفیشن  کے سامنے میں Govt Employee کا اندارج ہو۔
 🔸 ۔ اس کے بعد والے پوائنٹس میں گورنمنٹ / سیمی گورنمنٹ ملازم والے پوائنٹ میں YES ہو چکا ہے۔
 🔸۔ اپنے تمام کوائف ، خصوصاً  انگلش میں لکھے گئے نام کی سپیلنگ  , اور تمام  بائیو ڈیٹا چیک کر نے کے بعد اپنے دستخط کر کے فارم واپس کریں  گے ۔
نوٹ : آپ کا فارم فائنل Submit ہو گیا  ہے ۔ پاسپورٹ ملنے کے بعد  ، آپ کی کسی بھی غلطی کے باعث،  آپ کو بعد میں اپنے کوائف تبدیل کروانے کے لئے New Fee Pay کرنا ہو گی۔ 


 💠 آپ کا فارم فائنل Submit ہونے کے بعد آپ کے پرانے پاسپورٹ پہ وہ Stamp لگا دیں گے۔۔۔۔۔۔۔! 
(نیا پاسپورٹ ملنے کے بعد ، آپ اِسے  اُس کے ساتھ لازمی سٹیپل کریں ، خواہ اُس میں کوئی بھی ویزہ نہ لگا ہو )

٭٭٭ وارننگ٭٭وارنگ ٭٭اور ٭٭ وارنگ ٭٭٭
گورنمنٹ ملازمین ہونے کے باوجود جنہوں نے پرائیویٹ پاسپورٹ بنوایا ہوا ہے۔
 وہ محکمانہ NOC کے ساتھ متعلقہ پاسپورٹ آفس سے⭕ 27 ستمبر 2019⭕ سے پہلے پہلے گورنمنٹ پاسپورٹ بنوا لیں۔
27 ستمبر 2019   کے بعد 50 ہزار جرمانہ ہوگا اور محکمانہ کارروائی کے ساتھ ساتھ FIA میں ایف-آئی-آر بھی درج ہوگئی۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
نوٹ: اِ س پوسٹ کو تمام سرکاری ملازمین  یا وہ دوست جنہوں نے پاسپورٹ بنوائے ہوں اور سرکاری ملازمت  کا ارادہ رکھتے ہوں  ۔ اِسے پڑھ کر  یاد رکھیں تاکہ بوقتِ ضرورت  سکون سے رہیں ۔   
٭٭٭٭٭٭٭

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔