میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

منگل، 26 نومبر، 2019

موجودہ جمہوری ایتھوپیا

آکسفورڈ ، جرمنی، اٹلی  ، لندن اور امریکہ میں حاصل کی گئی تعلیم نے ، کمیونزم  سے دیوملائی دیوتاؤں کا یہ طلسم توڑا اور بالآخر سوشلزم پسپا ہوکر ، جمہوریت کے لئے جگہ چھوڑ گیا ۔ایک کروڑ سے کم آبادی والے  اِس جمہوری ملک میں   13 صوبے تھے۔
 1996 کے بعد   ، لسانی تعصب اور ہنگاموں کے بعد ، ایتھوپیا کو انتظامی بنیادوں پر 9 لسانی   زون (کیلیلی)میں  بدل کر خودمختیار ریاست بنا دیا اور دو  شہری انتظامیہ  عدیس ابا با اور ڈائر داویٰ   بنائے گئے ۔
 آئین علاقائی ریاستوں کو وسیع اختیار تفویض کرتا ہے ، جو وفاقی حکومت کے آئین کے مطابق ہونے تک اپنی حکومت اور جمہوریت قائم کرسکتی ہے۔ ہر خطہ اپنے عروج پر ایک علاقائی کونسل رکھتا ہے جہاں ممبران براہ راست اضلاع کی نمائندگی کے لئے منتخب ہوتے ہیں اور کونسل کو اس خطے کے اندرونی معاملات کو براہ راست رکھنے کا قانون سازی اور انتظامی اختیار حاصل ہوتا ہے۔
ایتھوپیا کے آئین کا آرٹیکل 39 مزید ہر علاقائی ریاست کو ایتھوپیا سے الگ ہونے کا حق دیتا ہے۔ تاہم یہ بحث جاری ہے کہ آئین میں کتنی طاقت کی ضمانت دی گئی ہے جو حقیقت میں ریاستوں کو دی جاتی ہے۔ کونسلیں اپنے مینڈیٹ کو ایک ایگزیکٹو کمیٹی اور علاقائی سیکٹرل بیورو کے ذریعے نافذ کرتی ہیں۔ کونسل ، ایگزیکٹو ، اور سیکٹرل عوامی اداروں کے اس طرح کے وسیع ڈھانچے کو اگلی سطح وریدہ  (woreda) میں تیار کیا گیا ہے ،  مقامی حکومت کے زیر انتظام ایتھوپیا کا انتظامی ڈویژن   وریدہ  (woreda) کہلاتا ہے ۔ 2017 کی مردم شماری کے مطابق ایتھوپیا کی کل آبادی  94،351،001 ہے ۔ 
وریدہ  (woredaعام طور پر ایک ساتھ ان خطوں میں جمع ہوجاتے ہیں ، جو ایک خطہ بنتے ہیں۔ اضلاع جو کسی زون کا حصہ نہیں ہیں ، کو خصوصی ڈسٹرکٹ نامزد کیا جاتا ہے اور وہ خود مختار اداروں کی حیثیت سے کام کرتے ہیں۔ اضلاع پر ایک وریدہ  (woreda کونسل کی حکومت ہوتی ہے جس کے ممبران ضلع میں ہر ایک کیبلے (kebele) کی نمائندگی کے لئے براہ راست منتخب ہوتے ہیں۔
کیبلے (kebele) جسے کسان ایسوسی ایشن بھی کہا جاتا ہے ، فوجی انقلاب کی سوشلسٹ انتظامیہ ، ڈِرگ(Derg)نے 1975 میں ترقی کو فروغ دینے اور زمینی اصلاحات کے انتظام کے لئے تشکیل دیا تھا۔ وہ ایک کلیدی عنصر بن گئے کہ حریف ایتھوپیا کی عوامی انقلابی پارٹی اور MEISON نے ایتھوپیا کے سرخ دہشت گردی (Ethiopian Red Terror)کے دوران قابو پانے کے لئے ایک دوسرے اور حکمران ڈِرگ سے لڑائی لڑی۔
ایتھوپیا میں تقریباً 670 دیہی وریدہ  (woreda)  اور 100 کے قریب شہری وریدہ  (woreda) ہیں۔ نئی نافذ کی جانے والی اصطلاحات عموماً عوام میں  کنفیوژن پیدا کرتی ہیں ،جیسے  کچھ لوگوں نے شہری اکائیوں کو وریدہ  (woreda)  سمجھا ہے ، جبکہ دیگر صرف دیہی اکائیوں کو  وریدہ  (woreda)   خیال کرتے ہیں ، جبکہ دوسروں کو شہری یا شہر کی انتظامیہ کا حوالہ دیتے ہیں۔ 
ایتھوپیا کے 9  انتظامی لسانی   ریجن (صوبوں)  جنہیں کیلیلی کہا جاتا ہے    کو  68 زون  (ڈسٹرکٹ ) میں تقسیم کیا گیا ہے ۔ ہر زون میں  سب ڈسٹرکٹ   ہیں اور اِن سب ڈسٹرکٹ کی انتطامی کونسل  ، وریدہ  (woreda)  کہلائی جاتی ہے ، گویا سیاسی اور سماجی اختیار  انتہائی نچلی سطح  پر تقسیم کردئے گئے ہیں ۔ 

میرے لئے ،بلکہ اُفق کے پار رہنے والے دوستو ! آپ کے لئے بھی یہ حیران کن ہوگا کہ ہر لسانی ریجن (صوبے)  کا الگ جھنڈا ہے ، الگ قانون ہے اور یہ الگ گورنر کے ماتحت  ہیں :
1- عدیس ابابا  ۔  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
2- افار ریجن (صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
3- امھارا   ریجن(صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
4- بینیشانگ گومزریجن  (صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔
5- ڈائر داویٰ    ۔  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
6- گمبیلا  ریجن(صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
7- ہرارے  ریجن(صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔
8- اورومیا   ریجن(صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔
9- صومالی   ریجن(صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
10- جنوبی قومیتی  ریجن  (صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
11- تیگرے ریجن (صوبے)  کے ڈسٹرکٹ  تفصیل   ۔  
ـــــــــــــــــــــــــــــــــ
اگلا مضمون : 
٭-  ایتھوپیا کے ماضی بعید میں سفر 
٭٭٭٭٭٭٭
 ٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

٭٭٭٭٭٭٭٭٭

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔